پنجاب سیف سٹیزا تھارٹی نیشنل سیکورٹی کا ادارہ ہے جس کے تمام سسٹم اور نیٹ ورک مکمل طور پر محفوظ ہے

09 Apr 2019

network-security-731x420

بہ تسلیمات میڈیا سینٹر پنجاب سیف سٹیز اتھارٹی لاہور۔
میڈیا مینیجر
ہینڈ آوٹ نمبر 210

پنجاب سیف سٹیزا تھارٹی نیشنل سیکورٹی کا ادارہ ہے جس کے تمام سسٹم اور نیٹ ورک مکمل طور پر محفوظ ہے
اتھارٹی کی ٹیکنیکل ٹیم روزانہ کی بنیاد پر اپنا نیٹ ورک مانیٹر کرتی ہے؛انٹرنل سکیورٹی پروٹوکولز کو محفوظ سے محفوظ تربناتے رہتے ہیں
اتھارٹی کے سسٹم کو برطانیہ سمیت دیگر بین الاقوامی کنسلٹنٹس نے وقتاً فوقتاً چیک کیا اور معیاری قرار دیاہے: ترجمان
اتھارٹی نے سائیٹس پر لگی ماڈیول کو ٹیسٹنگ فیز میں ہی غیر ضروری قرار دیتے ہوئے اتروا دیا تھا؛بین الاقوامی نشریاتی ادارے کی خبر حقائق کے منافی
اتھارٹی قومی سلامتی کے بنیادی ڈھانچے کو نقصان پہنچانے کی کوشش کرنے والے عناصر کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لاتی ہے :ترجمان

لاہور 9 اپریل:۔۔۔

پنجاب سیف سٹیزا تھارٹی نیشنل سیکورٹی کا ادارہ ہے جس کے تمام سسٹم اور نیٹ ورک مکمل طور پر محفوظ ہے۔ پراجیکٹ کی تیاری کے مراحل میں برطانیہ سمیت دیگر بین الاقوامی کنسلٹنٹس نے وقتا فوقتا اتھارٹی کے نیٹ ورک کا جائزہ لیا اور اسے عالمی سٹینڈرڈر کے مطابق محفوظ قرار دیا ہے۔ ترجمان کے مطابق پنجاب سیف سٹیز اتھارٹی بین الاقوامی اخبار میں شائع ہونے والی خبر کوسیاق وسباق کے منافی قرار دیتی ہے اور واضح کرتی ہے کہ سیف سٹیز اتھارٹی کا نیٹ ورک مکمل طور پر محفوظ ہے۔ ترجمان پنجاب سیف سٹیز اتھارٹی کے مطابق ادارے کی ٹیکنیکل ٹیم روزانہ کی بنیاد پر اپنا نیٹ ورک مانیٹر کرتی ہے۔ بین الاقوامی نشریاتی ادارے کی خبر میں بتائے گئے ماڈیول کو صرف سائیٹ پر لگی بیک اپ بیٹریوں کی صورتحال جاننے کیلئے استعمال کیا جاناتھا تاہم پنجاب سیف سٹیز کی جانب سے مذکورہ ماڈیول کو ٹیسٹنگ فیز میں ہی غیر ضروری قرار دیتے ہوئے اتروا دیا گیا تھا۔ ترجمان نے بتایا کہ غیر ضروری ماڈیول کو بروقت اتروا دینا اتھارٹی کے بہترین نگرانی کے عمل کو ظاہر کرتا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ سیف سٹی پراجیکٹ بین الاقوامی معیار کے مطابق اور بھرپور محنت ولگن کے ساتھ لگایا گیا ہے اور اتھارٹی کے سسٹم کو برطانیہ سمیت دیگر بین الاقوامی کنسلٹنٹس نے وقتاً فوقتاً چیک کیا اور معیاری قرار دیاہے۔ ترجمان نے بتایا کہ بین الاقوامی نشریات ادارے کی خبر میں سیف سٹیز اتھارٹی کاموقف بیان نہیں کیا گیا جو کہ ناظرین کو گمراہ کرنے کے مترادف ہے۔ شائع کی جانے والی خبر پبلک سیفٹی انفارسٹرکچر بارے ابہام پیداکرتی ہے جس کی اتنے بڑے نشریاتی ادارے سے توقع نہیں کی جاسکتی۔ ترجمان نے بتایا کہ اتھارٹی قومی سلامتی کے بنیادی ڈھانچے کو نقصان پہنچانے کی کوشش کرنے والے عناصر کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لاتی ہے اور نیشنل سکیورٹی سے وابستہ اداروں کی ساکھ کو مجروح کرنے کی ہرگز اجازت نہیں دی جائے گی۔ ترجمان نے بتایا کہ اتھارٹی انٹرنل سکیورٹی پروٹوکولز کو محفوظ سے محفوظ تر بنانے کیلئے مستقل اقدامات کرتی رہتی ہے۔

***

Share

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *